اندرون بلوچستان میں مون سون کا ایک اور سلسلہ طوفانی بارشوں کے ساتھ شروع شیرانی اور قلعہ عبداللہ میں بڑے پیمانے پر نقصانات زمین میں دراڑے پیدا ہو گئی

کوئٹہ(ثبوت نیوز)اندرون بلوچستان میں مون سون کا ایک اور سلسلہ طوفانی بارشوں کے ساتھ شروع ہوا جس میں شیرانی اور قلعہ عبداللہ میں بڑے پیمانے پر نقصانات ہوئے ہیں قلعہ عبداللہ کے علاقے لمڑان میں زمین کو بڑے پیمانے پر نقصانات پہنچادئیے اور زمین دو حصوں میں تقسیم ہو کر چار کلو میٹر داڑے پڑگئے

ساتھ میں قریبی آبادی کو بھی شدید نقصان پہنچادی گئی واضح رہے کہ بلوچستان کے اندرون علاقے شیرانی‘ قلعہ عبداللہ اور دیگر علاقوں میں مون سون کا ایک اور سلسلہ طوفانی اور سیلابی بارشوں کے ساتھ شروع ہو چکا ہے

جس میں ندی نالے آنے سے متعلقہ علاقوں میں بڑے پیمانے پر نقصانات ہوئے قلعہ عبداللہ کے علاقے لمڑان سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے زمین کو نقصان پہنچادیاگیا ہے اور زمین میں بڑے پیمانے پر کھڈے پید اہوگئے

زمین دو حصوں میں تقسیم اور چار کلو میٹر زمین پر داڑے پر بھی پڑ گئے ڈی سی قلعہ عبداللہ نے میڈیا کو بتایا کہ یہاں پر بارشوں سے ایک بار پھر بڑے پیمانے پر نقصانات ہوئے ہیں زمین مکمل بوس ہو گئی ہے اور دراڑے پیدا ہو گئی

اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے محکمہ جیالوجی کے ماہرین کو رپورٹ بھی ارسال کردی تاکہ معلوم ہوسکے کہ اس طرح زمین میں دراڑے کیوں پیدا ہو گئی انہوں نے کہاکہ نقصانات کے حوالے سے ضلعی انتظامیہ کوشاں ہے اور متاثرین کو سامان پہنچانے کیلئے اقدامات بھی جاری ہے۔