سی پیک سے بلوچستان کو صرف لاشیں ملی ہیں مراعات نہیں مکران ڈویژن کو چیک پوسٹوں میں بدل دیا ہے جلد رد عمل سامنے آئے گا۔ ہدایت الرحمن بلوچ

کوئٹہ(ثبوت نیوز) جماعت اسلامی بلوچستان کے جنرل سیکرٹری مولانا ہدایت الرحمن بلوچ نے کہا ہے کہ گوادر اور بلوچستان کے علاقوں میں عوام کے ساتھ زیادتیوں کے خلاف 30ستمبر کو کامیاب مظاہرہ کیا

اور حکومت وقت کو 30اکتوبر الیٹی میٹم دیا ہے کہ عوام اور خاص کر ماہی گیروں کا تذلل بند کیا جائے 31اکتوبر کو گوادر میں پریس کانفرنس کے ذریعے نومبر کے مہینے میں عظیم الشان دھرنے کا اعلان کرے گی

جو غیر معینہ مدت تک جاری رہے گا صوبائی حکومت نے جو بحران پیدا کیا وہ عوام کے مفاد نہیں پیٹ بھرنے کیلئے ہے‘یہ بات انہوں نے کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی‘ اس موقع پر جماعت اسلامی کے رہنماء ڈاکٹر عطاء الرحمن‘صوبائی پریس سیکرٹری ولی شاکر اور دیگر بھی موجود تھے

انہوں نے کہاکہ بلوچستان میں مفادات حاصل کرنے کیلئے ایک بار پھر ڈرامہ شروع ہوگیا ہے دونوں جانب سے عوام کی بجائے پیٹ بھرنے کی کوشش کررہی ہے اس وقت عوام مررہے ہیں خاص کر گوادر میں ماہی گیروں سے ایک دن کا نوالہ چھننے کی سازشیں کی جارہی ہے

ماہی گیروں کو معاشی طور پر مفلوج کیا جارہا ہے اسی طرح مکران ڈویژن کے عوام کو سیکورٹی کے نام پر تنگ کیا جارہا ہے انہوں نے کہاکہ ماہ نومبر میں سی پیک کے مراعات اور نا اہل حکومت کے خلاف اور اپنے حقوق کے لئے مکران میں ایک عظیم الشان دھرنا دینگے

جو غیر معینہ مدت تک جاری رہے گا،گوادر کے عوام پینے کی صاف پانی سے محرم ہے لیکن حکومت وقت اپنے کرسی بچانے میں مصروف ہے انہوں نے کہاکہ پورے سی پیک پروجیکٹ سے صرف لاشیں ملی ہے بارڈر پر ماہی گیر کو سیکورٹی حکام بلا وجہ تنگ کرنا سمجھ سے بالا تر ہے

سیکورٹی کے نام پر گوادر میں معافی قتل عام کیا جارہا ہے گوادر میں چیک پوسٹوں پر ہماری عوام، ماہی گیر اور دیگر افراد کی تذلیل ہورہی ہے

انہوں نے کہاکہ گوادر میں ہماری تذلیل کے لئے بنائے گئے چیک پوسٹوں کو فوری طورپر ختم کیا جائے ماہی گیروں کو تذلیل اور ان کے مسائل کو حل کیا جائے گوادر کے سی پیک سے عوام کو صرف تزلیل اور چیک پوسٹیں ملی ہے نہ کہ عوام کو ریلیف

انہوں نے کہاکہ بلوچستان ہماری سرزمین ہے اس کے وسائل پر سب سے پہلے ہماری حق بنتی ہے مکران ڈویڑن کو پورے چیک پوسٹوں میں تبدیل کر دیا ہے ہر دو قدم پر تنگ کیا جارہا ہے عوام کو سیکورٹی کے نام پر نہیں بلکہ ان کو تذلیل کرنے پر تنگ کیا جارہا ہے

تاکہ وہ گوادر چھوڑ کر چلے جائے ہم ہر مشکل گھڑی اپنے عوام کے ساتھ ہے میرا نام فورتھ لسٹ میں شامل کیا گیا کہ آپ ایک ضلع سے دوسرے ضلع نہیں جاسکتے۔