کوئٹہ‘ فحاشی کے اڈے کھل گئے‘ سرپرستی وزیراعلیٰ بلوچستان کے مشیر اور اہم رہنما کررہے ہیں‘ مکینوں کا الزام

کوئٹہ(ثبوت ڈیسک) کوئٹہ کے علاقے کرسچن کالونی کلی خیزئی سمنگلی روڈ کے مکینوں اور بلوچستان عوامی پارٹی اقلیتی ونگ نے کوئٹہ پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیاجن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہے‘اس موقع پرمکینوں نے ا لزام لگایا کہ ہمارے کالونی میں بعض بااثر لوگوں کی سرپرستی میں فحاشی کے اڈے کھلے ہوئے ہیں جس سے علاقے کے عوام تنگ آکر ہجرت کرنے پر مجبور ہیں

انہوں نے کہاکہ اس فحاشی اڈوں کی سرپرستی ایک ایم پی اے دنیش کمار اور باپ سے تعلق رکھنے والے علاؤ الدین کاکڑ اہم شخص شامل ہے

مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے پادری حاشر‘پادر ی ڈینل اور دیگر نے کہاکہ پہلے چمن میں رہائش پذیر تھے وہاں سے علاقے کے عوام نے نکال کر ہمارے کالونی میں آکر آباد ہو گئے آباد ہوتے ہی انہوں نے فحاشی کے اڈے کھل دئیے جب کالونی کے عوام اس حوالے سے اعتراضات اٹھاتے ہیں تو یہ لوگ ان پر تشدد اورتھانہ میں بند کرتے ہیں

انہوں نے کہاکہ یہ لوگ کالونی میں آباد غریب لوگوں کے گھروں پر بھی قبضہ کیا جارہا ہے اور دھمکی دیتے ہیں کہ ہم وزیراعلیٰ بلوچستان کے خاص کر بندے ہیں اگر آپ لوگوں نے کچھ بولا تو ہم آپ کے خلاف کارروائی کرینگے

انہوں نے کہاکہ ان فحاشی اڈوں کو خروٹ آباد تھانہ کے بھی مکمل سرپرستی حاصل ہے اور آئے روز ان کے گھر آکر ان کے ساتھ کھانا اور اس فحاشی اڈے میں مکمل شریک ہیں انہوں نے کہاکہ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ان فحاشی اڈوں کیخلاف کارروائی کی جائے اور جن لوگوں کیخلاف ایف آئی ار درج کیا ان کو ختم کیا جائے کالونی کے عوام کو انصاف فراہم کیا جائے۔