چمن بارڈر کے حوالے سے صوبائی وزیر داخلہ ضیائ لانگو کا نیا بیان سامنے آگا

کوئٹہ(ثبوت نیوز)صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء اللہ لانگو نے کہا ہے کہ پاک افغان چمن بارڈر کا مسئلہ حل کرنے کیلئے کوشاں ہے متاثرین کی جانب سے 10نکات میں سے 8نکات پر اتفاق کرلیا ہے 2ایسے نکات ہے جس کا وفاق سے تعلق ہے ان کے حل کیلئے کمیٹی وزیراعلیٰ کو رپورٹ پیش کریگی

اور وزیراعلیٰ وزیراعظم سے رابطہ کرینگے چمن کے عوام کو روزگار دینے کیلئے جلد لیویز اور پی ڈی ایم اے میں ملازمتیں دی جائیگی‘یہ بات انہوں نے پاک افغان بارڈر سے متعلق اجلاس کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہی

اجلاس میں صوبائی وزیر انجینئر زمرک خان اچکزئی‘ صوبائی مشیر کھیل عبدالخالق ہزارہ‘صوبائی وزیر حاجی نورمحمد دمڑ‘ اراکین اسمبلی حاجی محمد نواز کاکڑ‘اصغرخان ترین‘ مبین خان خلجی‘سیکرٹری داخلہ حافظ عبدالباسط‘ڈپٹی کمشنر چمن بشیر احمد‘اولسی تحریک یک چیئرمین حاجی صادق اچکزئی‘ چمن کے قبائلی اورتاجر برادری سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے شرکت کی

صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاء لانگو نے کہاکہ منگل کے روز پاک افغان بارڈر سے متعلق اجلاس ہوا اس میں بارڈر سے متعلق تبادلہ خیال کیاگیا اور چمن متاثرین کی جانب سے جو10نکات پیش کیے گئے اس پر حکومتی کمیٹی نے پیشرفت کرتے ہوئے 8نکات پر اتفاق کیا جب دو ایسے نکات ہے جو صوبائی حکومت کی بجائے

وفاق سے تعلق ہے ان پر عملدرآمد کرنے کیلئے صوبائی حکومت کی جانب سے قائم کمیٹی وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کو رپورٹ پیش کریگی اور وزیراعلیٰ بلوچستان اس سلسلے میں وزیراعظم عمران خان سے رابطہ کرینگے اور تجاویز وفاقی حکومت کے سامنے رکھیں گے

انہوں نے کہاکہ پاک افغان بارڈر پر جو لو گ متاثر ہوئے ان کو متبادل روزگار دینے کیلئے بحیثیت وزیر داخلہ میں نے جو اعلان کیا تھا کہ ان کو لیویز اور پی ڈی ایم اے میں نوکری دینگے اس پر بھی جلد عملدرآمد کرینگے انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہاکہ پاک افغان بارڈر سے متعلق بعض ایسے مسائل ہے جو صوبائی حکومت کی دائرہ اختیار میں نہیں ہے

اور اس کا تعلق وفاق سے ہے اس سے متعلق ہم وفاق سے رابطہ کرینگے انہوں نے کہاکہ پاک افغان بارڈر سے تعلق تمام مسائل کو باہمی مشاورت سے حل کرینگے اور کمیٹی کا اجلاس منعقد کرکے جلد رپورٹ وزیراعلیٰ کو پیش کرینگے۔