معاون خصوصی ڈاکٹر ظفرمرزا نے بھی استعفیٰ دے دیا

اسلام آباد(ثبوت نیوز) وزیر اعظم عمران خان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے بھی استعفیٰ دے دیا، ذرایع نے کہا ہے کہ وہ ادویات کی قیمتوں کے معاملے پر الزام کی زد پر تھے۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا بھی اپنے عہدے سے مستعفی ہو گئے ہیں، وزیر اعظم عمران خان نے ادویات کی قیمتیں بڑھنے پر انکوائری کی ہدایت کی تھی۔

ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ میں عمران خان کے کہنے پر پاکستان آیا تھا، ایمان داری اور محنت سے کام کیا ہے، پاکستان کے لیے کام کرنا میرے لیے باعث اعزاز ہے۔انھوں نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ میں نے معاون خصوصی کےعہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے، میں مطمئن ہوں کہ ایسے وقت میں عہدہ چھوڑا جب پاکستان میں کرونا کم ہو رہا ہے۔

واضح رہے کہ ایک ہی دن میں وزیر اعظم عمران خان کے 2 معاونینِ خصوصی عہدوں سے مستعفی ہو گئے ہیں، اب سے کچھ ہی دیر قبل ڈیجیٹل پاکستان کی سربراہ تانیہ ایدروس نے بھی ٹویٹ کے ذریعے خبر دی تھی کہ انھوں نے استعفیٰ دے دیا ہے، تانیہ ایدروس کی کمپنی ڈیجیٹل پاکستان کے خلاف بھی انکوائری چل رہی تھی۔

ذرایع کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے ادویات کی قیمتیں بڑھنے پر انکوائری کی ہدایت کی تھی، ڈاکٹر ظفر مرزا ادویات کی قیمتوں کے معاملے پر الزام کی زد میں تھے، ظفر مرزا نے ادویات کی قیمتیں بڑھنے کے معاملے پر استعفیٰ دیا۔

ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ معاون خصوصی کے کردار پر منفی تنقید کی وجہ سے مستعفی ہوا، پاکستان کے عوام بہتر صحت کی سہولتوں کے مستحق ہیں۔