عید الاضحی کی آمد‘ قربانی کے جانور کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگے بیوپاریوں کی جانب سے من پسند ریٹ لگا کر جانوروں کو فروخت کیا جارہا ہے

کوئٹہ(ثبوت نیوز)کوئٹہ میں عید الاضحی کے آمد کے ساتھ ہی مویشی منڈیاں آباد ہونے لگی تاہم قربانی کے جانوروں کی قیمتوں میں اضافے کے باعث لوگ مایوس ہو کر واپس لوٹ جاتے ہیں بیوپاریوں کی جانب سے اپنے من پسند ریٹ لگا کر قربانی کے جانوروں کو فروخت کیا جارہا ہے

تاہم ضلعی انتظامیہ کی جانب سے بھی نوٹس نہیں لیا جارہا ہے اور نہ ہی اس حوالے سے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں مویشی منڈیوں میں سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے بیوپاریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ کے مختلف علاقوں ائیر پورٹ روڈ‘کچلاک‘ بھوسہ منڈی‘سریاب روڈ اور دیگر علاقوں میں قائم مویشی منڈیوں میں ملک کے مختلف علاقوں میں قربانی کے جانور پہنچ گئے

تاہم ان کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگے ہیں عام قیمت ایک لاکھ سے ڈھائی لاکھ تک ہے لوگ مویشی منڈیوں میں جا کر زیادہ قیمتیں کے باعث واپس مایوس ہو کر لوٹتے ہیں بیوپاریوں کا کہنا ہے کہ ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے باعث قربانی کے جانوروں میں اضافہ کیاگیا ہے

کیونکہ پنجاب اور سندھ سے آنیوالے قربانی کے جانور کرایہ کی مد میں 80ہزار روپے لیا جارہا ہے جس کی وجہ سے یہاں مویشی منڈی میں بھی اس پردس سے پندرہ ہزار روپے روزانہ کی بنیاد پر خرچہ آتا ہے ان تمام تر اخراجات کو مدنظر رکھ کر قربانی کے جانوروں کی قیمتیں رکھی گئی ہے

جبکہ عوام کو کہنا ہے کہ صوبائی حکومت اس معاملے میں عدم دلچسپی لے رہی ہے اور بیوپاری اپنے من پسند ریٹ لگا کر قربانی کے جانور فروخت کررہے ہیں۔