دہشت گردی کو ہم نے مکمل طور پر ختم کیابلوچستان کی ترقی ہمیں ہمیشہ سے عزیز رہی ہے‘، نوا زشریف‘30 کے قریب سابقہ وزراء اور وزیراعلیٰ نے ن لیگ میں شمولیت اختیار کر لیا

کوئٹہ(ثبوت نیوز) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے قائد و سابق وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ بلوچستان کی ترقی ہمیں ہمیشہ سے عزیز رہی ہے

بلوچستان میں سڑکوں کا جال بچھانے کا سلسلہ شروع کیا، گوادر سے کوئٹہ تک عوام کو سفر کی بہترین سہولیات فراہم کیں بلوچستان کے عوام کو سفر کی بہترین سہولیات فراہم کیں اور بلوچستان سے غربت اور پسماندگی کا خاتمہ کرنے کی کوشش کی

ہم نے1998 میں گوادر کی ترقی کا سفر شروع کیا تھا، بلوچستان میں 400 سے زائد چھوٹے ڈیم کے منصوبے شروع کئے گوادر، کوئٹہ سڑک کی تعمیر سے 2 دن کا سفر 8 گھنٹے کا رہ گیا

سڑک کی تعمیر کے دوران 40 سے زائد نوجوان شہید ہوئے، گوادر سے خضدار اور رتو ڈیرو شاہراہ تعمیرکی، سڑک کی تعمیرسے جنوبی بلوچستان کے علاقوں کو سندھ سے جوڑا ہے،دہشت گردی کو ہم نے مکمل طور پر ختم کیا

اور لوڈشیڈنگ کو بھی مکمل طور پر ختم کر دیا تھا،ان خیالات کا اظہار انہوں نے دورہ کوئٹہ کے موقع پر مختلف وفد بات چیت جبکہ بلوچستان سے تعلق رکھنے والے سابق وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان، سابق صوبائی وزراء میں

سردار عبدالرحمان کھیتران، محمد خان طور اتماخیل، محمد خان لہڑی، عبدالکریم نوشیروانی، نور محمد دمڑ، عبدالغفور لہڑی، سردار مسعود لونی، ڈاکٹر ربابہ بلیدی، مجیب الرحمان محمد حسنی، اشوک کمار، سعید الحسن مندوخیل، شعیب نوشیروانی،میر سلیم کھوسہ

زینت شاہوانی،خان محمد جمالی،عاطف سنجرانی،میر عاصم کرد گیلو،سحر گل خلجی سمیت مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں،قبائلی عمائدین کے مسلم لیگ(ن) میں شمولیت کے موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا

اس موقع پر پارٹی کے مرکزی صدر سابق وزیراعظم محمد شہباز شریف،مرکزی چیف آرگنائزر مریم نواز، پرویز رشید، سردار ایاز صادق،مریم اورنگزیب،شیخ جعفر خان مندوخیل، سردار یعقوب خان ناصر،نواب چنگیز مری،زرک خان مندوخیل سمیت پارٹی کے دیگر مرکزی و صوبائی قائدین موجود تھے

محمد نواز شریف نئے شامل ہونے والوں کو خوش آمد ید کہتے ہوئے کہاکہ ان کی شمولیت سے پارٹی بلوچستان میں مزید مضبوط اور فعال ہو کر اور آنیوالے الیکشن میں بلوچستان میں حکومت بنائے گی

پارٹی میں شامل ہونیوالے افراد پارٹی کی مضبوطی اور فعالیت کیلئے اپنا کردار اد ا کریں انہوں نے کہاکہ بلوچستان کی ترقی ہمیں ہمیشہ سے عزیز رہی ہے ہم نے بلوچستان میں ہزاروں کلومیٹر سڑکوں کا جال بچھانے کا سلسلہ شروع کیا تاکہ غربت اور پسماندگی کا خاتمہ ہوسکے

گوادر سے کوئٹہ ساڑھے چھ سو کلومیٹر کی سڑک تعمیر کرکے بلوچستان کے عوام کو سفر کی بہترین سہولیات فراہم کیں گوادر کوئٹہ سڑک کی تعمیر سے دو دن کا سفرکم ہوکر آٹھ گھنٹے رہ گیا اس سڑک کی تعمیر کے دوران چالیس سے زائد نوجوان شہید ہوئے تھے

انہیں سلام پیش کرتے ہیں انہوں نے کہاکہ گوادر سے خضدار اور رتو ڈیرو شاہراہ تعمیر کرکے جنوبی بلوچستان کے علاقوں کو سندھ سے جوڑا گیااِن دونوں سڑکوں کی بنیادہم نے 1998-1999 میں رکھی تھی

ہکلہ اور ڈی آئی خان روڈ: ہگلہ اور ڈی آئی خان کی بنیادہم نے رکھی تھی اس منصوبے پر چار سال کام رْکا رہا، وزیراعظم شہبازشریف نے دوبارہ کام شروع کرایایارک ساگو ڑوب شاہراہ کو دورویہ اور بہتر بنانے

این 50 سے ملانے کا کام ہم نے شروع کیا انہوں نے کہاکہ باتفاق سے خضدار تک شاہراہ تعمیرکی گئی یک مچ سے خاران کی سڑک کی تعمیر کا آغاز کیا جو تقریباً تکمیل کے قریب ہے جاپان کے تعاون سے راکھی گاج سے بے واتا تک سڑک بنائی جو شمالی بلوچستان کو جنوبی پنجاب (ڈی جی خان) سے جوڑتی ہے انہوں نے کہاکہ ہم نے قلات، کوئٹہ، چمن،خضدار، کراچی دورویہ (این 25) پر کام شروع کیا

اس پر کام نہ روکا جاتا تو اب تک مکمل ہوتی، سولہ ماہ کی حکومت میں پھر کام شروع ہوا،، دوسے تین سال میں مکمل ہوگی اللہ تعالی کے فضل وکرم سے 1998-1999 میں کوسٹل ہائی وے کی بنیاہم نے د رکھی تھی گلگت سکردو ہائی وے ہم نے شروع کی

62 ارب روپے کی لاگت سے ہم نے ہی مکمل کی بلوچستان کے لئے ترقی اور ڈیویلپمنٹ کا جو کام ہم نے شروع کیاتھا، ہماری حکومت کے بعد وہ سفر روک دیا گیاہمارا شوق تھا ہماری محبت تھی ہماری فکر تھی بلوچستان کے لئے

انہوں نے کہاکہ ہم نے 1998 میں گوادر کی ترقی کا سفر شروع کیا تھا یہ آج اور کل کی بات نہیں ہے دہشت گردی کو ہم نے مکمل طور پہ ختم کیالوڈشیڈنگ کو مکمل طور پہ ختم کر دیاتھابلوچستان میں 400 سے زائد چھوٹے ڈیم کے منصوبے شروع کئے

بلوچستان اور سابق قبائلی علاقوں کے پانچ ہزار سے زائد طالب علموں کو وظائف دئیے پسماندہ علاقوں کے ان ہزاروں بچوں نے وظائف پر بہترین تعلیمی اداروں سے تعلیم حاصل کی تربت، خضدار، ڈیرہ مراد جمالی، پشین، گوادر، نوشکی اور وڈھ میں یونیورسٹی کیمپس کھولے جہاں ہزاروں نوجوان زیر تعلیم ہیں

ہم گوادر تک پانی پہنچا چکے تھے، بعد میں کام رک گیاہمیشہ سب کو ساتھ لے کر چلے،سب کو ساتھ لے کر چلنے کی روایت پر چلیں گے سب کے ساتھ تعاون کا رشتہ جوڑا تھا، اس رشتے کو مزید مظبوط بنائیں گے،دریں اثناء سیاسی قائدین نے نوازشریف کی آمد اور ملاقات پر شکریہ ادا کیا

سیاسی قائدین نے ملک بالخصوص بلوچستان کی ترقی کے لئے نوازشریف کے جذبے اور سوچ کو سراہا قائدین کا مستقبل میں اشتراک عمل اور سیاسی تعاون کرنے پر اتفاق کیاگیا